• مئی 10, 2021

"رمضان المبارک کے حوالے سے کچھ اہم تجاویز”

"رمضان المبارک کے حوالے سے کچھ تجاویز
ان میں سے کچھ تجاویز کل خطبہ جمعہ میں سنی تھیں، کچھ خود پلان کی تھیں سوچا آپ کی نذر بھی کرتا ہوں.
سب سے پہلے تو مجھے اور آپ کو یہ بات ذہن نشین کرنی چاہیے کہ رمضان عبادت کا مہینہ ہے کھانوں اور کھابوں کا نہیں کہ بندہ کھاتا ہی چلا جائے اور خواتین سارا کچھ بھول بھال کر بس کچن میں ہی گھسی رہیں، رمضان قران کا مہینہ ہے بازاروں میں جاکر وقت ضائع کرنے کا نہیں، رمضان محنت و مشقت کا مہینہ ہے سوتے رہنے کا مہینہ نہیں ہے کہ بندہ سحری کرکے سوئے اور بس نمازوں کے وقفے میں اٹھے.
اس رمضان کو اسپیشل پلان کریں کہ شاید پھر سے زندگیوں میں آتا ہے کہ نہیں، کتنے ہی لوگ ہماری آنکھوں کے سامنے اس دنیا سے چلے گئے، روزانہ کتنے لوگوں کی وفات کے میسجز پڑھ رہے ہیں. اگر اس رمضان میں اپنی بخشش نہ کروا سکے تو پھر جبرائیل کی بددعا اور نبی مکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی اس پر آمین کو ذہن میں رکھیے گا.
۱. رمضان کا تیس دنوں کا کیلنڈر بنائیں.
۲. قران کتنا پڑھنا، تفسیر کتنی پڑھنی، کونسی احادیث پڑھنی ہیں، کونسی یاد کرنی ہیں ڈائری پر نوٹ کریں اس کو دنوں میں تقسیم کرکے کیلنڈر میں درج کریں.
۳. سحر و افطار میں ضرورت کے پیش نظر کھانا بنایا جائے بلاضرورت اور رنگے بھرنگے کھانوں سے بچا جائے.
۴. کچن کا بھی کیلنڈر بنائیں جو سادہ بھی ہو اور کفایت شعاری والا بھی.
۵. جتنا گھر میں پکا کر ضائع کرنا ہے وہ راشن کسی غریب کے گھر میں ڈلوا دیں.
۶. جتنی بھی خریداری کرنی ہے وہ رمضان کے لیے ہو یا عید کے لیے وہ ان دو تین دنوں میں کرلیں.
۷. مکمل کوشش کریں کہ نہ خواتین بازار میں جائیں اور نہ مرد. ہم عید کے چکر میں رمضان کی بابرکت ساعتیں بازاروں میں ضائع کردیتے ہیں. لہذا جوتے ہوں یا کپڑے وہ ابھی خرید لیں.
۸. اسکرین (خواہ ٹی وی کی ہو یا موبائل کی) کو رمضان کے ان دنوں میں حتیٰ المقدور کم کردیں. اس کا بھی ٹائم ٹیبل بنائیں کہ کب استعمال کرنا.
۹. روزہ یا دن گزارنے کے لیے اسکرین، موویز یا ڈراموں کا سہارہ لینے کی بجائے قران اور مطالعہ سے وقت گزاریں.
۱۰. اس مہنگائی کے دور میں بڑی رقم صدقہ کرنا مشکل معلوم ہوتا ہے تو کوشش کریں یکم رمضان سے اخیر رمضان تک روزانہ کچھ روپے پیسے لازمی اللہ کے راستے میں خرچ کریں کہ اللہ کو نیت چاہیے ہندسے نہیں… نبی مکرم صلی اللہ علیہ وسلم رمضان میں تیز آندھی کی طرح صدقہ کیا کرتے تھے.
۱۱. رمضان کی راتوں میں قیام کے لیے مساجد میں جائیں تو گروپس بنا کر گپ شپ کرنے نہ بیٹھیں بلکہ ایک ایک لمحے کو قیمتی بنا لیں کہ رمضان گزرنے کے بعد دل یہ بولے کہ تو نے رمضان کو ضائع نہیں کیا.
۱۲. چاند دیکھ کر روزہ رکھا جاتا ہے اور چاند دیکھ کر ہی عید کرنے کا حکم ہے. تبصروں اور تجزیؤں سے گریز کریں کہ یہ دو دن کا چاند ہے ہے فلاں ہے فلاں ہے کہ اس کام سے باقاعدہ منع کیا گیا ہے.
دیگر کئی کام ہوسکتے ہیں جو آپ کو اپنے حوالے سے زیادہ مفید لگیں گے. کوشش کریں رمضان سے قبل مکمل پلاننگ کرلیں کہ رمضان کا اک اک لمحہ ہم نے کیسے گزارنا ہے. صرف اپنا نہیں بلکہ اپنے گھر والوں کا بھی اور یہ کوئی نئی باتیں نہیں ہیں بلکہ رسول معظم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت بھی ہے کہ جب رمضان آتا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کمر کس لیا کرتے تھے.
اللہ ہمیں رمضان کا حق ادا کرنے کی توفیق عطا فرمائے.
وما توفیقی الا باللہ
محمد عبداللہ

Muhammad Abdullah

Read Previous

کچھ ایسی یادیں جن میں آپ کو بھی اپنا بچپن نظر آئے گا

Read Next

وبا کی خطرناک صورتحال، بھارت کے لیے دعا یا بدعائیں

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے